کے پی کے سے تعلق رکھنے والی خاتون کوہ پیما اور ہنزہ کے واجداللہ اور عزیز شمشالی نے منفی 20 ڈگری سنٹی گریٹ میں 5100 میٹر اونچی چوٹی سر کرلیا

Rush peak.JPG

گلگت(خبرنگارخصوصی)KPKسے تعلق رکھنے والی خاتو عظمیٰ یوسف،ضلع ہنزہ نگر سے تعلق رکھنے والے واجد اللہ اور عزیز شمشالی نے موسم سرما ء میں پہلی مرتبہ 5100میٹر بلندی چوٹی رش پیک کو سر کر کے ریکارڈقائم کیا اور گلگت بلتستان میں موسم سرماء میں مقامی و بین الاقوامی سیاحوں کو راغب کرنے میں بھر پور کردار ادا کیاہے۔میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کلائمبر عظمیٰ یوسف،واجد اللہ اور عزیز شمشالی نے کہا کہ 5فروری کو ہم نیبیس کیمپ سے مہم جوئی شروع کی اور 8تاریخ کو رش پیک کو سرکرکے پاکستان کا جنڈا لہرایا، جہاں پرموسم منفی 20سے کم تھا اور موسم بہت خراب ہونے کے باوجود ہم نے ہار نہیں مانا اور رشک پیک کے چوٹی تک پہنچنے میں کامیاب ہوگئے۔ان کا کہنا تھا کہ موسم کی خرابی کے باعث راستے میں بہت مشکلات درپیش آئے مگر اللہ تعالیٰ نے ہمیں ہمت دی اور ہم اپنے مشن میں کامیاب ہوگئے۔واضح رہے عظمیٰ یوسف نے اکتوبر کے ماہ میں 6050میٹر بلند منگلنگ چوٹی بھی سرکر چکی ہیں اور وہ پہلی خاتون ہے جس نے موسم سرماء میں رش لیک تک مہم جوئی کہ ہے۔کوہ پیماء واجد علی نے اس سے قبل گولڈن پیک جس کی بلندی 7027میٹر ہے بھی سرکرچکے ہیں اور عزیز شمشالی نے بھی اس سے قبل 6050میٹر بلند چوٹی سرکرچکے ہیں اور وہ ایک ایڈوینچر فوٹو گرافر بھی ہیں۔یاد رہے گلگت بلتستان میں موسم سرماء میں مہم جوئی کے روایات بہت کم ہے اور انہوں نے گلگت بلتستان میں سرماء کے موسم میں سیاحت کو فروغ دینے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ حکومت اور عوام کی تعاون رہی تو موسم سرماء میں بھی گلگت بلتستان میں سیاحت کوفروغ کے لئے کام کرنے کے لئے تیار ہیں جس سے گلگت بلتستان میں غربت میں کمی آئے گی

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s