محکمہ تعلیم گلگت بلتستان معیاری تعلیم کو عام کرنے کے لئے کام کررہاہے ۔ ڈپٹی ڈائریکٹر محکمہ تعلیم ضلع شگر

shigarسکردو(رجب علی قمر) ڈپٹی ڈائریکٹر محکمہ تعلیم ضلع شگر عبدالحمید نے کہا ہے کہ کوالٹی ایجوکیشن پر کھبی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا اور محکمہ تعلیم گلگت بلتستان معیاری تعلیم کو عام کرنے کے لئے سرگرم عمل ہیں ایکسل پبلک سکول تسر کی سالانہ نتائج کے اعلان اور تقریب تقسیم انعامات کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے تعلیم کو عام کرنے کے سلسلے میں بچوں کو کتابیں بھی مفت میں دینے کا فیصلہ کیا ہے اور تعلیم کو عام کرنے کے لئے ضروری ہے کہ عوام میں شعور کو اجاگر کیا جائے انہوں نے کہا کہ محکمہ تعلیم شگر اپنی بساط کے مطابق بہتر تعلیم کی فراہمی کے لئے کوشاں ہے وسیع و عریض رقبے پر پھیلے اس حسین ترین وادی میں سکول تو موجود ہیں مگر اساتذہ کی تعداد نہ ہونے کے برابر ہے ان کا کہنا تھا کہ ضلع کھرمنگ کے مقابلے میں ضلع شگر میں اساتذہ کی تعداد آٹے میں نمک کے برابر ہے اور منظور شدہ سکولوں کی تعداد بھی بہت کم ہے جس کے باعث تعلیمی میدان میں شگر پیچھے ہے تاہم اس کمی کو پورا کرنے کے لئے ہم سب کو جدوجہد کرنے کی ضرورت ہے انہوں نے کہا کہ اس وقت پورے شگر میں 178سرکاری سکو ل ہیں ان میں سے صرف 88سکولز منظور شدہ ہے انہوں نے کہا کہ شگر کے نمائندوں کی زمہ داری بنتی ہے کہ وہ اپنی توجہ تعلیم پر مرکوز کریں اور عوام بھی اپنے اندر تعلیمی شعور کو اجاگر کرنے کی کوشش کریں اور نمائدوں کی مدد سے علاقے میں تعلیم کو عام کرنے کی کوشش کریں تاکہ علاقے سے ناخواندگی کا خاتمہ ہو اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مولاناابراہیم زاکری نے کہا کہ علاقے میں تعلیم و تربیت کے ذریعے ہی سے طلباء کو ایک اچھا انسان بنا سکتا ہے جس کے لئے اساتذہ والدین کو کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے ان کا کہنا تھا کہ اگر اساتذہ اپنی پیشے کے تقدس کو بحال رکھتے ہوئے بچوں پر توجہ دیں تو معیار تعلیم عام ہوسکتا ہے ساتھ ہی والدین بچوں کی تربیت اور تعلیم کی جانب متوجہ ہوں اور معاشرے میں بھی تعلیم یافتہ افراد کی قدر کرنے لگیں تو تعلیم عام ہونے میں دیر نہیں لگتی ان کا کہنا تھا کہ تعلیم سے بچوں کو تعلیم سے دور کرنے میں ان تینوں برابر کے شریک ہوتے ہیں کیونکہ اساتذہ اپنے پیشے کی تقدس سے واقف نہیں تو والدین کو یہ نصیب نہیں کہ اپنے بچوں کی پڑھائی میں دلچسپی لے ساتھ ہی معاشرے میں پڑے لکھے اور ان پڑ لوگوں میں کوئی فرق محسوس نہیں کیا جاتا جس کی وجہ سے کوئی بھی بچہ تعلیم کی طرف دل سے توجہ نہیں دیتے لہذا ہم سب کو مل کر گلگت بلتستان میں تعلیم کو عام کرنے کے لئے کوشیش کرنا ہوگا کیونکہ تعلیم ایک شہری کا حق ہے

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s