گلگت بلتستان میں بڑھتی ہوئی ماحولیاتی آلودگی کی وجہ سے انسانی زندگی پر منفی اثرات مرتب ہورہے ہیں: سدپارہ مڈل سکول اسکردو میں مقررین کا خطاب

0101.jpgسکردو (رجب علی قمر ) محکمہ تحفظ ماحولیات گلگت بلتستان کی جانب سے سدپارہ مڈل سکول میں آگاہی براے تحفظ ماحولیات کے عنوان سے تقریب کا انعقاد کیا گیا. تقریب سے سینئر صوبائی وزیر حاجی اکبر تابان ،رکن اسمبلی کاچو امتیاز, حیدر خان سید منور حسین اسسٹنٹ ڈائریکٹر محکمہ ماحولیات گلگت بلتستان, پریس کلب سکردو کے صدر محمد حسین آزاد، سابق چئیرمین ایل ایس او شگری خورد نثار عباس ،شیر محمد چئیرمین ایل ایس او سدپارہ اور سکول ہیڈ ماسٹر علی محمد شاکری و دیگر نے خطاب کیا جبکہ سکول کے طلبا و طالبات اور مقامی عمائدین نے بھی تقریب میں شرکت کi. اس موقع پر سینئر وزیر گلگت بلتستان حاجی اکبر تابان کی قیادت میں سکول کے طلبا و طالبات نے تحفظ ماحولیات آگاہی واک مہم میں حصہ لیا سکول ہذا میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ گلگت بلتستان میں بڑھتی ہوئی ماحولیاتی آلودگی سے انسانی زندگی پر منفی اثرات مرتب ہورہے ہیں. گدلا پانی ،جنگلات کی کٹاﺅ اور دیگر ماحولیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے رو زبروز ماحول آلودہ ہوتا جارہا ہے جس سے نہ صرف مختلف بیماریاں جنم لے رہی ہے بلکہ انسانی زندگی بھی متاثر ہوتی جارہی ہے مقررین نے کہا کہ سدپارہ گاﺅں میںصفائی اور ماحول کو آلودگی سے پاک رکھنے کے تدابیر نہ ہونے کی وجہ سے تمام تر آلودگی ڈیم میں منتقل ہورہی ہے جس سے سدپارہ ڈیم میں موجودہ پانی شدید آلودگی کا شکار ہے اور یہی پانی پورے سکردو سٹی میںپینے کے لئے استعمال کیا جاتا ہے سدپارہ ڈیم کی پانی میں آلودگی کی وجہ سے ہر سال سکردو سٹی میں پانی سے جنم لینے والی بیماریاں جن میں ہیپٹائٹس ،پیٹ کی بیماریاں وغیرہ لاحق ہوتی جارہی ہے مقررین نے کہا کہ ان بیماریوں کی روک تھام کے لئے موئثر اقدامات اُٹھانے کی ضروروت ہے جب تک ہمارا ماحول پاک صاف نہیں ہوگا بیماریاں اور مسائل بڑھتے جائیں گے سکردو شہر میں پینے کی صاف پانی کی فراہمی کے لئے سدپارہ گاﺅں کے لوگوں کومناسب سہولیات فراہم کرنے کی ضرورت ہے وہاں پر صفائی کرنے کے لئے اقدام اُٹھانے کی اشد ضرورت ہے سدپارہ کے رہائشیوں کی جانب سے کوڑا کرکٹ اور دیگر مصنوعی چیزیں قریبی نالے میںپھینک دیا جاتا ہے جو کہ ڈیم تک منتقل ہوجاتی ہے اور پانی کی آلودگی میں اضافہ ہوتا جارہا ہے سدپارہ نالے میں سیلاب کی وجہ سے ڈیم کی اوسط گہرائی کم ہونے کے ساتھ پانی بھی آلودہ ہورہی ہے جس کی روک تھام کے لئے کوئی پلاننگ مرتب نہیں کیا گیا ہے مقامی آبادی کو حکومتی سطح پر ماحول کو پاک رکھنے کے مواقع فراہم کرنے اور صفائی کا بندوبست کرنے کے پابند بنانے کی بھی اشد ضروروت ہے اس موقع پر مقامی ایل ایس او کے چئرمین شیر علی نے مطالبہ کیا کہ سدپارہ ڈیم میں پانی کی آلودگی کو ر وکنے کے لئے سدپارہ گاﺅں کو میونسپلٹی ایریا میں شامل کیا جائے تاکہ بلدیہ کے اہلکار معمول کے مطابق علاقے میں صفائی ستھرائی کا کام کریں تاکہ لوگ گندگی اور کوڑا کرکٹ پانی میںپھینکنے کے بجائے ان کے حوالے کریں اس موقع پر اسسٹنٹ ڈائریکٹر محکمہ ماحولیات گلگت بلتستان سید منور حسین نے کہا کہ محکمہ ماحولیات کی جانب سے سدپارہ ڈیم میں بڑھتی ہوئی پانی کی آلودگی کو مدنظر رکھتے ہوئے فوری پچاﺅ کے لئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں اس احساس کو شدت سے محسوس کرتے ہوئے محکمہ ماحولیات گلگت بلتستان نے طلبا و طالبات میں آگاہی مہم شروع کیا گیا ہے اور ہوٹلوں میں سیمنارز کے بجائے تعلیمی اداروں سے اس مہم کا آغاز کیا ہے دنیا میں پانی کی قلت اور بڑھتی ہوئی مانگ کے پیش نظر محکمہ ماحولیات نے گلگت بلتستان میں ٹھوس اقدامات اُٹھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے سکردو سمیت گلگت بلتستان کے دیگر علاقوں میں بھی سب سے پہلے عوام میںبیداری اور شعور پیدا کرنے کے لئے مہم چلائی جارہی ہے جب تک ہمارا ماحول صاف ستھرا نہیں ہوگا صاف پانی کی فراہمی ممکن نہیں ہے جتنی صاف پانی کے وسائل گلگت بلتستان میں موجود ہے وہ کہیں اور مئیسر نہیں ہے لیکن ہم خود صاف پانی اور اپنے ماحول کو آلودہ کررہے ہیںجس کی روک تھام کے لئے ڈیم ایریاز ،ندی نالوں اور چشموں کے مقامات پر خصوصی پلاننگ کے تحت کام کررہے ہیںاُنہوں نے کہا کہ صاف ستھرا ماحول صاف پانی کی فراہمی کی ضمانت ہے جو کہ محکمہ ماحولیات حکومت گلگت بلتستان کی تعاون سے پورا کریں گے ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s