سی پیک کانفرنس ٹوپی ڈرامہ کے سوا کچھ نہ تھا ، صوبائی حکومت نے اپنی ناکامی اور نااہلی چھپانے کےلئے ہم پر مقدمات درج کئے: عوامی ایکشن کمیٹی

 the provincial government on the cases to conceal their failure and incompetenceگلگت (ارسلان علی) عوامی ایکشن کمیٹی کے رہنماؤں نے کہا ہے کہ اقتصادی راہ داری میں حصہ لینے سے کوئی طاقت ہمیں نہیں روک سکتی ہے۔ صوبائی حکومت عوامی ایکشن کمیٹی اور فوج کو لڑانا چاہتی ہے، سی پیک میں حصہ لیکر ہی گھروں کو جائیں گے خالی ہاتھ جانے کےلئے بالکل تیار نہیں ہیں ،سی پیک کانفرنس کو ناکام بنانے کےلئے غداری کے مقدمات درج کرکے ہمیں گرفتار کیا گیا۔صوبائی حکومت اقتصادی راہ داری منصوبے میں وفاق سے حصہ لینے میں مکمل طور پر ناکام رہی ہے اور وفاق کے سامنے جی بی کے عوام کی ترجمانی بھی نہیں کی گئی۔جمعہ کے روز گلگت پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چیئر مین عوامی ایکشن کمیٹی مولانا سلطان رئیس، شیخ یاسب الدین ،جہانزیب انقلابی ،فداحسین ،صفدرعلی و دیگرنے کہاکہ صوبائی حکومت نے ایک مزموم عزائم کی تکمیل کےلئے ہمیں گرفتار کروایا تھا۔ حکومت چاہتی تھی کہ گلگت میں منعقدہ ہونے والی سی پیک کانفرنس کے دوران گلگت میں ہنگامہ آرائی ہو اور کانفرنس کو ناکام بنایا جائے تاکہ سی پیک منصوبے میں حصہ لینے میں ناکامی کا ملبہ عوامی ایکشن کمیٹی پر گرایا جاسکے۔ ہمیں گرفتار کرکے صوبائی حکومت عوام اور عوامی ایکشن کمیٹی کے ممبران کو مشتعل کرکے سڑکوں پر لانے کا منصوبہ رکھتی تھی لیکن ہمارے ممبران اور عوامی حلقوں نے انتہائی دانشمندی کا مظاہرہ کرتے ہوئے صبرکا دامن نہیں چھوڑا اور کوئی ایسا جذباتی قدم نہیں اٹھایا جس کی وجہ سے گلگت بلتستان کی بدنامی ہوتی یا سی پیک کانفرنس کے انعقاد میں کوئی خلل پڑتا۔انہوں نے کہاکہ امیر تنظیم اہلسنت والجماعت مولانا قاضی نثار احمد ،امام جمعہ والجماعت آغا سید راحت حسین الحسینی سمیت وکلاء،صحافی برادری اور عوامی حلقوں کے مشکور ہیں کہ انہوں نے مشکل وقت میں ہمیں تنہا نہیں چھوڑا ،سی پیک کانفرنس ٹوپی ڈرامہ کے سوا کچھ نہ تھا اپنی ناکامی اور نااہلی کو چھپانے کےلئے ہم پر مقدمات درج کئے گئے ۔مولانا سلطان رئیس نے کہاکہ سی پیک کانفرنس سے دوروز پہلے مجھے کانفرنس میں شرکت کی دعوت بھی دی گئی اور باقاعدہ طور پر دعوت نامہ بھی مجھے دیا گیا جبکہ کانفرنس کے انعقاد سے ایک روز قبل گرفتار کیا گیا ۔اگر ہم غدار تھے تو کانفرنس میں شرکت کی دعوت کیوں دی گئی ،ہم نے حکمرانوں سے تنگ آکر راحیل شریف سے سی پیک منصوبے میں حصہ دلانے کا مطالبہ کیا اور آج بھی پاک آرمی سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ اس معاملے میں گلگت بلتستان کے عوام کی خواہشات کا خون نہ ہونے دیں ہم پاک آرمی کا احترام کرتے ہیں جو ہمیں آپس میں لڑانا چاہتے ہیں اور ہم پر غداری کے مقدمات درج کرائے وہی لوگ اصل غدار اور عوام کے دشمن ہیں اور مستقبل میں حقوق غصب کرنے والے ہی غدار کہلائیں گے۔ انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہاکہ ہم نے رہائی کےلئے کوئی ڈیل نہیں کی اللہ تعالیٰ کے فضل وکرم سے باعزت طور پر بغیر کسی ڈیل کے رہائی ملی ہے ہم پر بے بنیاد الزامات لگاکر ایف آئی آرز درج کرنے والوں کے خلاف قانونی کارروائی کرنے کا ہم بھی قانونی حق رکھتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ کوئی بھی حکومت ظلم کے ساتھ قائم نہیں رہ سکتی ہے گلگت بلتستان کو سی پیک منصوبے میں حصہ ملنے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے اور بہت جلد آئندہ کے لائحہ عمل طے کیاجائے گا ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s